6

غیر اعلان شدہ ترجمان نے بی جے پی کے لئے وہپ جاری کیا:پرینکا

لکھنؤ:28جولائی(یواین آئی) راجستھان میں سیاسی رشہ کشی کے درمیان اشوک گہلوت حکومت کے خلاف ووٹ کرنے کی بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی) کی جانب سے جاری وہپ پر کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے بی ایس پی سپریمو مایاوتی کا نام لئے بغیر نہ صرف انہیں بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی)کا غیر اعلانیہ ترجمان قرار دیا بلکہ اسے جمہوریت اور آئین کاقتل کرنے والوں کوکلین چٹ دینے کے مترادف بتایا۔
محترمہ واڈرا نے منگل کو اپنے ٹوئٹ میں لکھا’بی جے پی کے غیر اعلانیہ ترجمان نے بی جے پی کی مدد کے لئے وہپ جاری کیا ہے لیکن یہ صرف وہپ نہیں ہے کہ بلکہ جمہوریت اور آئین کا قتل کرنے والوں کو کلین چٹ بھی ہے’۔
اس سے قبل پیر کو بی ایس پی جنرل سکریٹری ستیش مشرا نے راجستھان میں اپنے سبھی 6اراکین اسمبلی کو وہپ جاری کر کے کااراکین کو ہدایت دی ہے کہ کانگریس حکومت کی جانب سے لائے جانے والے تحریک اعتماد کے خلاف ووٹ کریں۔وہپ میں صاف طور سے سے لکھا ہے کہ اگر کوئی بھی رکن اسمبلی وہپ کی خلاف ورزی کرتا ہے تو ان کی رکنیت ختم کی جاسکتی ہے۔ پارٹی نے سبھی چھ اراکین کے علاوہ گورنر کلراج مشر ا اور اسمبلی اسپیکر سی پی جوشی کو بھی خط بھیجا ہے کہ 10ویں فہرست کے مطابق کسی بھی نیشنل پارٹی کاانضمام ریاستی سطح پر نہیں ہوسکتا ہے کیونکہ سبھی اراکین نےبی ایس پی کے نشان پر انتخاب میں حصہ لیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں