7

مقامی نوجوانوں کو روزگار کامطالبہ۔تلنگانہ جناسمیتی نے چلو اسمبلی کا اعلان

مقامی نوجوانوں کے لئے روزگار کے مواقع کے مقصد سے پڑوسی ریاست آندھراپردیش کے خطوط پر قانون بنانے کامطالبہ کرتے ہوئے تلنگانہ جناسمیتی نے اس ماہ کی 21تاریخ کو چلو اسمبلی احتجاج کا اعلان کیا ہے۔پارٹی کے صدر پروفیسر کودنڈارام نے نامپلی میں واقع پارٹی کے دفتر میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ریاست بھر میں خالی سرکاری ملازمتوں کو پُر کیاجائے اور نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کئے جائیں،اسی مطالبہ کے ساتھ ان کی پارٹی چلو اسمبلی کی اپیل کرتی ہے۔انہوں نے نشاندہی کی کہ ریاست بھر میں 1.48لاکھ ملازمتیں خالی ہیں،نئے اضلاع،نئے منڈلوں میں تقریبا50ہزار ملازمتیں خالی ہیں۔تلنگانہ کوریاست کادرجہ ملنے کے سات تا آٹھ سال کی تکمیل کے باوجود یہ ملازمتیں خالی ہیں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ بے روزگار نوجوانوں کو بھتہ فراہم کیاجائے اور پرائیویٹ ملازمت کرنے والوں کی مدد کی جائے۔پروفیسر کودنڈارام نے کہا کہ سادہ بیع نامہ،مختص اراضیات اور قولدار کسانوں کے امور کا نئے ریونیو ایکٹ میں کوئی تذکرہ نہیں کیاگیا ہے۔انہوں نے کہاکہ اس ریونیو ایکٹ کے سلسلہ میں کل جماعتی اجلاس طلب کیاجانا چاہئے۔صدر تلنگانہ جناسمیتی نے سرکردہ سماجی جہدکار سوامی اگنی ویش کی موت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں